پاکستانیوں کے اربوں روپے ڈوب گئے، صبح سویرے انتہائی دردناک خبر آگئی

موجودہ معاشی و سیاسی حالات کے باعث سٹاک مارکیٹ میں سرمایہ کاری میں تیزی سے کمی آرہی ہے اور 100 انڈیکس 39 ہزار کی نفسیاتی حد بھی کھوچکا ہے۔پہلے سے ہی تنزلی کی شکار سٹاک ایکسچینج رواں ہفتے کے آغاز پر بھی گراوٹ کا شکا ہے اور سوا 12 بجے تک اس میں 758 پوائنٹس کی کمی ریکارڈ کی جاچکی ہے۔ آج (پیر کو) سٹاک مارکیٹ کا 100 انڈیکس مسلسل کمی کے باعث 39 ہزار کی نفسیاتی حد کھو کر 38 ہزار 468 پوائنٹس پر آچکا ہے جس کے باعث سرمایہ کاروں کو اربوں روپے کے نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ یہاں یہ وضاحت بھی ضروری ہے کہ 100 انڈیکس اس وقت گزشتہ 11 ماہ کی کم ترین سطح پر آچکا ہے۔

گزشتہ ہفتے کے دورن سٹاک مارکیٹ میں 1772 پوائنٹس کی کمی ہوئی اور 100 انڈیکس 39 ہزار 226 پوائنٹس کی سطح پر بند ہوا۔کاروباری ہفتے کے دوران پاکستان سٹاک ایکسچینج میں سرمایہ کاروں کی جانب سے شیئرز کی فروخت کا رجحان رہا ہے جس کی سب سے بڑی وجہ موجودہ معاشی حالات ہیں۔ گزشتہ ہفتے بیرونی سرمایہ کاروں نے84 لاکھ ڈالر مالیت کے حصص فروخت کیے جبکہ شیئرز کی مالیت میں 336 ارب روپے کی کمی ریکارڈ کی گئی۔

خبر ایجنسی کے مطابق پاکستان کو فوری طور پر 10 سے 12 ارب ڈالر کی ضرورت ہے، ملک کے موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے عالمی مالیاتی ادارے ہوں یا ریٹنگ ایجنسی اپنے خدشات کا اظہار کررہے ہیں جس کے باعث جنوری سے اب تک پاکستان سٹاک ایکسچینج سے بیرونی سرمایہ کار لگ بھگ 30 کروڑ ڈالر کا سرمایہ نکال چکے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here